بچوں سے حراسگی کا کیس انتہائی سنگین نوعیت کا ہے، میرٹ پر تفتیش کی جائے گی۔ ڈی پی او ڈاکٹر فہد احمد

ڈومیلی (رضوان سیٹھی + محمد نبیل حسن) تھانہ ڈومیلی میں ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم ڈاکٹر فہداحمد نے آئی جی پنجاب کے ویژن کی ہدایات پر کھلی کچہری کا انعقاد کیاگیا۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم نے سائلین کے مسائل سنے، کھلی کچہری میں علاقہ بھرسے سائلین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ کھلی کچہری میں پولیس افسران و اہلکاروں نے کی بھی بڑی تعداد موجود تھی، سائلین نے اپنے مسائل ڈی پی اوجہلم کے سامنے پیش کئے، زیادہ تر مسائل زمینوں کے متعلق تھے۔

ڈی پی او جہلم ڈاکٹر فہد احمد نے صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیتے ہوئے کہا کہ پولیس کے فرائض میں یہ شامل ہے کہ وہ آپ کی جان و مال کی حفاظت کرے ہم نفری کی کمی کو جواز بنا کر احتساب کا عمل نہیں روک سکتے، شہریوں کو بروقت انصاف کے لیے اپنے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لائیں گے۔

انہوں نے صحافی مشرف کیانی کو صحافتی فرائض پر ایف آئی آر کے شامل کرنے پر میرٹ پر تفتیش کی یقین دہانی کروائی اور ڈی ایس پی سوہاوہ کو اس ایف آئی آر کی خود انکوائری کرنے کا حکم دیا جبکہ تفتیشی افسران کو فنڈ کی فراہمی کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ بہت جلد اس پر بہترین حکمت عملی بنائے گئے اور بالخصوص پی ایس ایف کے حوالے سے ایک کلب بنایا جائے گا جس میں دو تین تھانوں کے سیمپل کو جمع کر کے پی ایس ایف بھجوایا جائے گا۔

ڈی پی او جہلم کا کہنا تھا کہ میرے آفس کے دروازے ہر سائل کے لیے کھلے ہیں آپ کو تھانے میں کسی سفارش کی ضرورت نہیں اور نہ میرے آفس میں آنے کے لیے آپ کو کسی سفارش کی ضرورت ہے۔ ڈومیلی میں بچوں سے حراسگی کا کیس انتہائی سنگین نوعیت کا تھا جس پر مکمل میرٹ پر تفتیش کی جائے گی اور کسی کے ساتھ زیادتی نہیں کی جائے گی۔

کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہو ئے ، ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم نے کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کھلی کچہری میں پیش ہونے والے سائلین کی درخواستوں کا میرے آفس میں الگ ریکارڈ رکھا جاتا ہے جس پر ہفتہ وار رپورٹ طلب کی جاتی ہے۔سائلین اپنی بات کھل کر بتائیں تاکہ کم سے کم وقت میں سائلین کا مسئلہ حل ہو سکے۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم نے کھلی کچہری میں آئے ہوئے سائلین کے پیش کردہ انفرادی و اجتماعی مسائل کو فرداً فرداً سنا اور موقع پر ہی انکے ازالے کے احکامات جاری کئے۔

بعد ازاں ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم نے تھانہ ڈومیلی کے فرنٹ ڈیسک، حوالات تھانہ اور مال خانہ تھانہ کا جائزہ لیا اور مزید کہا کہ تھانہ میں آنے والے سائلین کے ساتھ خوش اخلاقی اور خندہ پیشانی سے پیش آئیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button