جہلم کے ہوٹلوں پر مضر صحت کھانے اور صفائی کا ناقص انتظام، ملاوٹ مافیا کا راج، فوڈ اتھارٹی خاموش

جہلم: شہر اور گردونواح کی سڑکوں پر قائم ہوٹلوں پر دھڑلے سے مضر صحت کھانے فروخت کئے جا رہے ہیں، جن کے استعمال سے شہری مختلف بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں۔

ناقص و غیر معیاری گوشت کے استعمال سے شہری طرح طرح کی بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں جبکہ اندرون شہر ملٹی نیشنل کمپنیوں کی نقل کرتے ہوئے جعل سازوں نے ملٹی نیشنل کمپنیوں سے ملتے جلتے ناموں کے مشروبات اور دودھ کے ڈبے تیار کرکے فروخت کرنے شروع کر رکھے ہیں۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ علی الصبح مضافاتی علاقوں سے آنے والے گوالے ناقص و غیر معیاری کیمیکل سے تیار کردہ دودھ گھروں و دکانوں پر دیدہ دلیری کے ساتھ پنجاب فوڈ اتھارٹی کے ذمہ داران کے بیدار ہونے سے قبل فروخت کرکے اپنے اپنے گھروں کو لوٹ جاتے ہیں۔

شہر کی سڑکوں کے دونوں اطراف پکوڑے سموسے اور فاسٹ فوڈ فروخت کرنے والے دکانداروں نے حفظان کے صحت کے اصولوں کو ایک طرف رکھتے ہوئے سڑکوں پر سے اڑنے والی گردوغبار اور دیگر حشرات جو کہ اشیاء خوردونوش پر بھنبھناتے نظر آتے ہیں کی فروخت شروع کر رکھی ہے۔

شہریوں نے ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی سے مطالبہ کیا ہے کہ ضلع جہلم میں فرض شناس ایماندار فوڈ اتھارٹی کے عملے کو تعینات کیاجائے تاکہ شہری حفظان صحت کے اصولوں کے ساتھ ساتھ معیاری کھانوں اور دودھ کا استعمال کر سکیں تاکہ شہری بیماریوں سے محفوظ رہ سکیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button