ضلع جہلم میں مہنگائی کا سونامی کنٹرول نہ ہو سکا، گرانفروشی پر ضلعی انتظامیہ خاموش

جہلم: ضلع بھر میں مہنگائی کا سونامی کنٹرول نہ ہو سکا، گرانفروشی پر ضلعی انتظامیہ خاموش، انتظامیہ نے شہریوں کو گرانفروشوں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا، شہری سراپا احتجاج، وزیراعلیٰ پنجاب سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق شہر سمیت ضلع بھر میں مہنگائی میں روز بروزتیزی کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے، شہری و دیہی علاقوں میں مہنگائی کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا۔ مہنگائی کیوجہ سے شہریوں کو 2 وقت کی روٹی کے لالے پڑ گئے۔

بے روزگاری پہلے ہی شہریوں کے لئے مشکلات کا باعث بن چکی ہے جبکہ گرانفروشی سے غریب افراد تنگ آچکے ہیں، ضلع بھر میں مہنگائی کی شرح میں کئی سو گنا اضافہ ہو چکا ہے جس کی بنیادی وجہ پرائس کنٹرول مجسٹریٹس کی عدم دلچسپی ہے، ڈپٹی کمشنر نے چینی کے نرخ 85 روپے مقرر کررکھی ہے جبکہ دکاندار وں نے انتظامیہ کے احکامات کو ہوا میں اڑاتے ہوئے 110، 115 روپے میں فروخت شروع کر رکھی ہے۔

اسی طرح حکومت پنجاب نے روٹی کے نرخ 10 روپے مقرر کررکھے ہیں جبکہ نان بائیوں نے حکومتی احکامات پاؤں تلے روندتے ہوئے روٹی کے نرخ 15 روپے وصول کرنے شروع کررکھے ہیں جبکہ پھلوں ، سبزیوں اور اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں بھی من مانا اضافہ کرکے فروخت کئے جارہے ہیں ، ضلعی انتظامیہ ، پرائس کنٹرول مجسٹریٹس گرانفروشی روکنے کی بجائے شہریوں کوگرانفروشوں کے رحم و کرم پر چھوڑ کر خواب خرگوش کے مزے لوٹنے میں مصروف دکھائی دیتے ہیں۔

شہریوں نے وزیراعلیٰ پنجاب، چیف سیکرٹری پنجاب سے مطالبہ کیاہے کہ ضلع جہلم کے شہریوں کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے فرض شناس ایماندار افسران کو تعینات کیا جائے تاکہ شہری حکومت کے مقرر کردہ نرخوں پر اشیاء خوردونوش خرید کراپنے بچوں کو 2 وقت کی روٹی مہیا کر سکیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button